Today's Columns

جنوبی پنجاب کے پہلے سکول اولمپکس از چوہدری خالد رسول

دور جدید میں کھیلوں کی اہمیت و افادیت سے انکار ممکن نہیں ہے،بلا شبہ کھیلیں ہمیں توانا،تندرست،فعال رکھنے کے ساتھ ساتھ بیماریوں سے محفوظ رکھنے کا بڑا ذریعہ بھی ہیں،موجودہ دور میں نظر دہرائی جائے تو یہ بات عیاں ہوتی ہیکہ گوناگوں مصروفیات کیباعث دنیا کا ہر فرد میدانوں میں کھیلوں اور تفریحی سرگرمیوں سے دور ہوکر سمارٹ اینڈرائیڈ موبائل کا گرویدہ بن چکا ہے،وہ فکر معاش کے چکر میں خود کو اورجسمانی مشقت میں مضمر اپنی خوشگوار متوازن صحت کو بھول چکا ہے،خود کوچاق و چوبند رکھنے کیلئے اسکے پاس وقت ہی نہیں ہے،دوسری طرف آرام پسندی ومعاشی آسودگی کی آسائشوں کے ساتھ وہ نت نئی بیماریوں کی دلدل میں پھنستا ہی چلا جا رہا ہے۔صحت مند معاشرہ صحت مندانہ سرگرمیوں سے ہی وجود میں آتا ہے،صحت مند سرگرمیوں کے ساتھ اگر سماجی و معاشی سہولیات کو جدید سائنسی ضروریات کے مطابق ساتھ لے کر چلا جائے تو جسمانی ونفسیاتی تفکرات،عارضوں اور بیماریوں سے نجات مل سکتی ہے۔حقیقت یہی ہے کہ ہمیں بھرپور صحت مند و توانا زندگی کیلئے خود کو میدانوں میں کھیلوں سے منسلک رکھنا ہوگا،اسی میں ہی ہماری بقا پوشیدہ ہے ہر شعبہ زندگی میں کھیلوں کی روایت کے احیاء،نظم وضبط،سپورٹس مین سپرٹ اورصحت مندانہ ایونٹس کو فروغ دینا وقت کا بڑا تقاضا بھی ہے۔
محکمہ تعلیم جنوبی پنجاب کے زیر اہتمام کھیلوں کی افادیت اجاگر کرنے کیلئے صوبائی وزیر تعلیم ڈاکٹر مراد راس کی سربراہی میں ڈیرہ غازی خان میں8نومبر سے12نومبر تک کھیلوں کا سب بڑا ”سکول اولمپکس”کے نام سے میلے کا انعقاد کیا گیا۔پانچ روزہ سکول اولمپکس اپنی نوعیت کا پہلا اور منفرد مقابلہ جات کا انوکھا مجموعہ تھا جو بین الاقوامی اولمپکس کی طرز پر سجایا گیا،جس میں جنوبی پنجاب کے11اضلاع سے سینکڑوں کھلاڑیوں نے مختلف کھیلوں کیمقابلوں میں جیت کی امنگ، مدمقابل کو پچھاڑنے،اپنی صلاحیتوں،طاقت اورمہارتوں کو آزمانے،سونے،چاندی،کانسی کے تمغوں کے حصول کیلئے تگ و دو کی۔یاد رہے کہ جنوبی پنجاب میں اتنے بڑے پیمانے پر کھیلوں کے مقابلوں کا انعقاد اس سے پہلے کبھی نہیں ہوا تھا،اب یہ اولمپکس آنے والے کھیلوں کے مقابلوں کیلئے سنگ میل ثابت ہوں گے۔سب سے بڑھ کر ان اولمپکس کے انعقاد کا مقصد تعلیمی اداروں میں کورونا کے باعث معطل کھیلوں کی سرگرمیوں کو بحال،بین الاقوامی معیار کے کھلاڑی تیار کرنے کیلئے نرسری تیار کرنا،بچوں کی توجہ انٹر نیٹ، کمپیوٹر، ویڈیو گیمز، موبائل فون اور منفی سرگرمیوں سے انکی توجہ ہٹانا بھی ہے۔سکول اولمپکس جنوبی پنجاب کے طلباوطالبات میں اچھی عادات،مثبت سوچ،قوت برداشت،ڈسپلن کا فروغ اور تفریح کے مواقع پیدا کرنے کی ابتداء ہے۔یہ مقابلہ جات پسماندہ اور دور دراز علاقوں میں شعور بیداری کا موجب بنے گا،پہلیایسے ایونٹس صرف بڑے شہروں میں ہوتے تھے۔
سکول اولمپکس کی مشعل بین الاقوامی اولمپکس کی طرز پر مقابلوں سے10دن پہلے ہاکی کے لیجنڈ سمیع اللہ نے بہاولپور میں روشن کی جو کہ جنوبی پنجاب کے تمام اضلاع سے ہوتی ہوئی ڈیرہ غازیخان پہنچی۔8نومبرکو خوبصورت رنگا رنگ تقریب میں صوبائی وزراء ڈاکٹر مراد راس،ڈاکٹر اختر ملک،سردار حسنین بہادر دریشک نے باقاعدہ طور پر جنوبی پنجاب کے پہلیسکول اولمپکس کا افتتاح کیا۔اولمپکس میں طلبا وطالبات کے مابین اتھلیکٹس،ہاکی،فٹبال،والی بال،بیڈمنٹن اور ٹیبل ٹینس کے مقابلہ جات ہوئے۔لڑکوں کے ہاکی کے مقابلے بہاولپور میں اور فٹ بال کے
مقابلے ملتان میں منعقد ہوئے تاکہ جنوبی پنجاب کے باقی دو ڈویژنوں کو بھی مقابلوں میں برابری کے طور پر شریک کیا جاسکے۔کھلاڑیوں کو سرکاری
اداروں کے ساتھ سکولوں کے ہاسٹلز میں قیام کی سہولیات دی گئیں جب کہ اولمپکس کیلئے فنڈز جبوبی پنجاب کے تینوں ثانوی و اعلی ثانوی تعلیمی بورڈز نے فراہم کئیجو کہ بورڈز طلبا وطالبات سے رجسٹریشن کے وقت سپورٹس فنڈز کی مد میں وصول کرتے ہیں،یہ بات قابل ذکر ہے کہ ان فنڈز کو اس سے پہلے کبھی بھی ایسے منظم،بامعنی اور مثبت سرگرمیوں کیلئے استعمال نہیں کیا گیا تھا۔
جنوبی پنجاب سکول اولمپکس کے مقابلے مختلف اداروں میں شیڈول کے مطابق منظم انداز میں جاری رہے، کھلاڑی طلبا وطالبات اپنا اور اپنے ادارے،ضلع کے نام روشن کرنے کیلئے اپنی صلاحیتوں،مہارتوں کا لوہا منواتے رہے جب کہ اس دوران کوئی بھی ناخوشگوار واقعہ تک پیش نہ آیا۔یوں12نومبر کو کھلاڑیوں کی خوشی کا وہ پرمسرت دن بھی آ پہنچا جب انہیں انعامات سے نوازا جانا تھا۔تعلیمی بورڈ آفس ڈیرہ غازی خان میں پرجوش ورنگا رنگ اختتامی تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں وفاقی وزیر مملکت برائے موسمی تغیرات زرتاج گل وزیر، مشیر وزیر اعلی پنجاب محمد حنیف پتافی،وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار کے بھائی سردار جعفر بزدار،سیکرٹری سکولزجنوبی پنجاب ڈاکٹر احتشام انور،انتظامی افسران نے بہترین کاکردگی پر جنوبی پنجاب کے کھلاڑیوں میں میڈلز اور ٹرافیاں تقسیم کیں اور آئندہ سال کے سکول اولمپیکس کا پرچم ضلع ملتان کے حوالے بھی کیا گیا۔بہاولپور ضلع 510 پوانٹس،پانچ گولڈاور دو سلور میڈلز کے ساتھ پہلے جنوبی پنجاب سکول اولمپیکس کا چیمپئین قرار پایا،بیسٹ اتھلیٹ فی میل کا اعزاز لیہ کی اقصی کنول اور بیسٹ اتھلیٹ میل کا اعزاز بہاولپور کے محمد نعمان نے حاصل کیا۔بہاولنگر نے تین گولڈ اور چار سلور میڈلز،رحیم یار
خان نے دو گولڈ،دو سلور اور ایک کانسی،وہاڑی نے دو سلور اور ایک کانسی،خانیوال نے ایک گولڈ اور دو کانسی،ملتان نے دو کانسی اور ضلع لیہ نے سلور اور کانسی کا ایک ایک میڈل حاصل کیا۔اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر مملکت زرتاج گل وزیر نے کہا کہ ڈیرہ غازیخان کو اولمپکس کی میزبانی پر انہیں فخر ہے،ڈیرہ غازی خان کے کامیاب سپورٹس ایونٹ سے آنے والی تبدیلی اب یہاں سے لاہور پہنچے گی۔انہوں نے کہا کہ سمارٹ اینڈرائیڈ فون نے نئی نسل کو ہماری روایات،اقدار اور اخلاقیات سے دور کردیا ہے،ہمارے کھلاڑی حدود وقیود کا خیال رکھتے ہوئے کھیل میں بھی آگے بڑھیں،مواقعوں سے فائدہ اٹھاکرملک وقوم کا نام دنیا بھر میں روشن کریں۔مشیر وزیر اعلی پنجاب محمد حنیف خان پتافی نے کہا کہ سرکاری سکولز تعلیم کے ساتھ کھیل میں بھی کسی سے کم نہیں ہیں،حکومت پنجاب کھلاڑیوں کی صلاحیتوں میں نکھار لانے کیلئے ایسے مواقع فراہم کرتی رہے گی،حوصلے اور ہمت سے مشکلات سے لڑنا کھلاڑی طلبا و طالبات کا شیوہ ہوتا ہے۔
وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار کی نمائندگی کرتے ہوئے انکے بھائی سردار جعفر خان بزدار نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کا فوکس اس خطے کا احساس محرومی دور کرنا ہے،کھیلوں کی سرگرمیوں کو فروغ دے کر ہم صحت مند معاشرہ تشکیل دے سکتے ہیں،ڈیرہ غازیخان میں ایسے ایونٹس کا انعقاد جاری رکھیں گے۔سیکرٹری سکولز ایجوکیشن جنوبی پنجاب ڈاکٹر احتشام انور نے کہا کہ ڈیرہ غازی خان سے پاکستان کے پہلے سکول اولمپکس کی بنیاد رکھ دی گئی ہے،ٹرانس جینڈر سکول،سکول کونسلز،آن لائن میگزین،قومی کھیل ہاکی کی نرسری کے بعد اب سکول اولمپکس کا سلسلہ آئندہ سال بھی جاری رکھا جائے گا۔اختتامی تقریب میں چیئرپرسن تعلیمی بورڈ کشور ناہید،ڈی پی آئیز اعزاز جوئیہ،طاہرہ شفیق،ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرز احمد حسن رانجھا،قیصر عباس رند،ڈپٹی سیکرٹریزجام آفتاب،شاہدحسین،مظہرالحق،سی ای اوز مسعود ندیم،شمشیر خان،سیکشن آفیسر حنا چوہدری،ڈائریکٹر سپورٹس راؤ عمر حیات،ڈی ای او نصراللہ خان،ڈویژنل سپورٹس آفیسر عطا الرحمن،اسسٹنٹ ڈائریکٹرجمعہ خان،تعلیمی افسران سمیت طل جببا وطالبات کی کثیر
تعداد نے شرکت کی۔اس موقع پر پوزیشن ہولڈرز طلبا وطالبات کی خوشیاں قابل دید تھیں۔

٭…٭…٭

About the author

Todays Column

Todays Column

Leave a Comment

%d bloggers like this: