Muhammad Ashfaq Mughal Today's Columns

وزیراعظم کا دورہ فیصل آباد — کروڑوں کا خرچہ تنقید اپوزیشن از محمد اشفاق مغل ( لائلپور نامہ )

Muhammad Ashfaq Mughal
Written by Todays Column

وزیراعظم پاکستان اپنے لشکر کیساتھ زرعی یونیورسٹی بذریعہ ہیلی کاپٹر اترے جہاں وزیر اعلی پنجاب سمیت وفاقی وزراء ‘ قومی و صوبائی اسمبلی کے ممبران نے پرتپاک استقبال کیا جبکہ معاون خصوصی برائے سیاسی ابلاغ ڈاکٹر شہباز گل نے فیض اللہ کموکا اور خیال کاسترو کے ہمراہ سرکٹ ہائوس میں پریس کانفرنس کر کے پہلے ہی صحت کارڈ کے اجراء سمیت وزیراعظم کے دورے کو کامیاب مفید قرار دیدیا حالانکہ کروڑوں روپیہ خرچ کر کے وزیراعظم صرف اپنے درباری جی حضوری اور چند صنعت کاروں سے ملاقات کرتے نظر آئے صنعتی شہر کی تعمیر و ترقی سمیت آٹھوں بازاروں کی ری ماڈلنگ ماسٹر پلان بارے کوئی بات نہ کی اور نہ ہی پینے کے صاف پانی کو گھر گھر پہنچانے سمیت اندرون شہر میں گزشتہ 40برسوں میں قائم زہریلا دھواں ‘ اگلتی انڈسٹریوں‘ فیکٹریوں ملوں جو انتہائی خطرنا ک کیمیکل زدہ پانی زیر زمین چھوڑ کر زرعی زمین بانجھ بنانے کے ساتھ انسانی زندگی کی بقاء کے لئے خطرہ بنی ہوئی ہیں ان کو شہر سے باہر منتقل کرنے کے احکامات جاری کئے مقام افسوس جڑانوالہ کو ضلع کا درجہ دینے کا شور بھی دب گیا ڈویژنل کمشنر اور اس کے عملے کی محنت پھرتیاں بھی کام نہ آ سکی صنعت کار مخالفت کرتے رہے کیونکہ کھرڑیانوالہ میں قائم انڈسٹریاں فیکٹریاں جڑانوالہ چلے جائیں گی جس کا دنیا میں منفی اثرپڑ سکتا ہے ویلیو کم ہونے کا اندیشہ ہے جبکہ جڑانوالہ کو ضلع بنانے کے بے شمار فوائد بھی ہونگے وہاں نئی ہائوسنگ کالونیاں مزید انڈسٹریاں سڑکوں کا جال موٹر وے کیساتھ لاہور کا سفر 70کلو میٹر کم ہو کر فیصل آباد سے صرف ایک گھنٹے تیس منٹ میں لاہور پہنچ سکتے ہیں لیکن اتنے بڑے لشکر کے ساتھ آ کر کوئی ٹھوس کام نہ کیا صرف صحت کارڈ کا اجراء کیا وہ وزیراعظم اپنے دفتر میں بیٹھ کر بھی کر سکتے تھے لیکن یہی پرانے راگ اپوزیشن پر تنقید نئے الفاظ کے ساتھ جاری رکھی حالانکہ نواز شریف کو خود باہر جانے دیا گارنٹر شہباز شریف ادھر ہے ان پر ہاتھ نہیں ڈالا جا رہا اور نہ ہی ہمت کر کے ان کا ساتھ دینے والوں کے خلاف کوئی ٹھوس کارروائی کی جارہی ہے آصف زرداری بھی ملک کے اندر موجود ہیں ا ن پر اگر کرپشن ثابت ہوتی ہے تو ان کے خلاف کارروائی ہونی چاہیے لیکن دونوں کی کرپشن کا اتنا پیسہ نہیں جتنا ان پر خرچ کر کے زبانی تقریریں کر کے تنقیدیں کی جا رہی ہیں شہری وزیراعظم کے دورے سے ناخوش اور غریب عوام کے ٹیکسوں سے جمع کئے گئے کروڑوں روپے خرچ کر کے صرف اپوزیشن پر تنقید کرنے اور ا یک ہی جگہ تقریریں ہیلتھ کارڈ جاری کرنے کو سٹیج شو قرار دے رہے ہیں جو وزیراعظم ہائوس میںکم پیسوں میں ہو سکتا تھا ہیلتھ کارڈ فیصل آباد ڈویژن کے لئے بہت بڑی خوشخبری لیکن یہ کارڈ ہسپتال میں داخل مریضوں پر استعمال ہو گا مختلف سرکاری و پرائیویٹ ہسپتال سے پتہ چلا کہ عام بیماری شعبہ بیرونی مریضاں یا پھر اسپیشلسٹ ڈاکٹر کو معائنہ کروانے لیبارٹری سے ٹیسٹ کروانے کی صورت میں پیسے ادا کرنے ہونگے جبکہ پرائیویٹ ہسپتال والے تو اسے مذاق بھی قرار دے رہے ہیں یہ صرف ہسپتال میں داخل جسے ڈاکٹر 15روز تک باقاعدہ تصدیق کریں جب تک ٹیسٹ لیبارٹری اور معائنہ فیس مریض خود ادا کرے پھر داخل ہو پھر یہ کارڈ کارآمد ہو گا یعنی ایک کروڑ آبادی والے شہر میں صرف دسہزار کے قریب کوئی قریب المرب یا پھر دل کے عارضے ‘ خواتین کی ڈلیوری آپریشن وغیرہ میں قابل ہو سکتا ہے لیکن ادویات جو پہلے ہی غریبوں کی پہنچ سے دور ہیں اسے صرف ایمرجنسی میں دی جائیں گی باقی خود خریدنی پڑے گی چاہیے تو یہ تھا کہ ہیلتھ کارڈ پر ہر شخص اپنا مکمل چیک اپ فٹنس وغیرہ پہلے فری کرواتا اور پھر بوقت ضرور ت اس کو فری ادویات دی جاتی اس کے ساتھ آنکھوں‘ جگر ‘ دل ‘ گردے سمیت تمام مخصوص بیماریوں بالخصوص خواتین کو آئوٹ ڈور میں چیکنگ ان کے لیبارٹری ٹیسٹ پھر تجویز کنندہ مستند ادویات بالکل فری دے کر مکمل صحت یاب کیا جائے لیکن شہر کے بڑے سرکاری ڈی ایچ کیو اور الائیڈ سمیت گورنمنٹ جنرل ہسپتالوں میں ابھی تک کارڈ فعال کرنے علاج وغیرہ کا طریقہ معلوم نہیں جو وزیر صحت ‘ سی ای او ہیلتھ‘ ڈی ایچ او‘ ضلعی انتظامیہ کی کارکردگی ظاہر کر رہا ہے تاریخی شہر کی عوام نے وزیراعظم پاکستان کو پہلے مکمل شہر کے مسائل سے آگاہ کر کے ان کے بہتر حل کے لئے تاجروں سے بھی تجاویز لیکر دوبارہ دورے کی دعوت پر زور دیا ہے جس میں وزراء کی فوج نہیں صرف ورکر‘ تاجر‘ صنعت کار عام شہریوں سے مسائل پوچھ کر فوری حل کرنے کے لئے اقدامات کئے جائیں وگرنہ مقروض ملک کے غیور عوام کا پیسہ ضا ئع نہ کیا جائے-

٭…٭…٭

About the author

Todays Column

Todays Column

Leave a Comment

%d bloggers like this: